تفسیر میں امام اہل سنتؒ کی بصیرت : ایک دلچسپ خواب

ڈاکٹر محمد حبیب اللہ قاضی

مولانا قاری عبدالباری جامعہ اسلامیہ دارالعلوم سرحد پشاور سے فارغ التحصیل ہیں۔ راقم کے ہم سبق رہ چکے ہیں۔ ۱۹۸۷ء میں مدرسہ سے فراغت کے بعد علم کے ساتھ عمل کے میدان کو منور کرنے کے لیے حضرت مولانا قاری شیر محمد بونیری کی معیت میں سال کی جماعت کے ساتھ تبلیغ پر چلے گئے۔ اس کے بعد ان کا زیادہ تر وقت درس وتدریس اور تبلیغ میں گزرتا ہے۔ انتہائی ملنسار، پرہیزگار اور سیدھے سادے آدمی ہیں۔ آج کل پشاور یونیورسٹی میں فارسٹ کالج کی مسجد میں امامت وخطابت کے فرائض انجام دے رہے ہیں۔ ساتھ ساتھ نماز عشا کے وقت قرآن پاک کادرس بھی دیتے ہیں۔ خوش آواز بھی ہیں، اس لیے لوگ ان کے درس میں شوق وذوق سے بیٹھتے ہیں۔ گزشتہ دنوں راقم الحروف یونیورسٹی جاتے ہوئے چند منٹ کے لیے ان کی ملاقات کے لیے ان کے دولت کدہ پر گیا تو انھوں نے امام اہل سنت حضرت مولانا محمد سرفراز خان صفدرؒ سے متعلق اپنا خوب صورت خواب سنایا جسے قلم بند کر کے میں قارئین کی خدمت میں پیش کر رہا ہوں۔ 

قاری صاحب نے کہا کہ ۲۰۰۶ء کی بات ہے کہ میں درس قرآن دے رہا تھا۔ پہلے دن میں نے سورۂ مائدۃ کی آیت نمبر ۵ ’’الْیَوْمَ أُحِلَّ لَکُمُ الطَّیِّبَاتُ وَطَعَامُ الَّذِیْنَ أُوتُواْ الْکِتَابَ حِلٌّ لَّکُمْ‘‘ کا درس دیا۔ دوسرے دن جب آیت نمبر ۶ ’’یَا أَیُّہَا الَّذِیْنَ آمَنُواْ إِذَا قُمْتُمْ إِلَی الصَّلاۃِ فاغْسِلُواْ وُجُوہَکُمْ وَأَیْْدِیَکُمْ إِلَی الْمَرَافِقِ‘‘ کا درس دیا تو ایک صاحب نے سوال کیاکہ اس آیت مبارکہ کاماقبل آیت سے کیا تعلق ہے؟ وہاں نکاح سے متعلق احکام ہیں اور یہاں وضو کے مسائل کی تفصیل ہے۔ میں نے اپنی کم علمی اور طالبانہ سطح کے مطابق جواب تو دے دیا، لیکن گھر آکر سوچ میں پڑ گیا کہ معلوم نہیں، میرا جواب صحیح تھا یا غلط؟ اگر جواب غلط دیا ہے تو اللہ تعالیٰ کے ہاں پکڑ ہوگی۔ ابھی تو جان چھڑالی ہے، لیکن کل قیامت کے دن کیا جواب دوں گا؟

عشا کا وقت تھا۔ اسی فکر میں جواب کی تلاش کے لیے گھر میں موجود تفاسیر دیکھنے لگا۔ جلالین اٹھائی، ربط نظر نہیں آیا۔ معارف القرآن میں دیکھا، جواب نہ ملا۔ مواہب الرحمن اٹھائی، تسلی نہیں ہوئی۔ ڈھونڈتے ڈھونڈتے اور اوراق پلٹتے پلٹتے تکیے کا سہارا لیا تو آنکھ لگ گئی۔ نیند کی وادی میں چلا گیا تو دیکھتاہوں کہ اپنی ہی مسجد میں اسی جگہ درس دے رہا ہوں۔ یہی آیات ہیں اور لوگ بیٹھے ہوئے ہیں۔ اتنے میں ایک آدمی دوڑتاہو ا اند رداخل ہوا اور مجھے مخاطب کرکے کہاکہ باہر دروازے پر رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم تشریف لائے ہیں۔ آپ کے ساتھ سیدنا صدیق اکبر رضی اللہ عنہ بھی ہیں اور اندر آنا چاہتے ہیں۔ میں درس چھوڑ کر دروازے کی طرف لپکا تورحمت عالم صلی اللہ علیہ وسلم حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ کوساتھ لے کر صحن مسجد میں پہنچ چکے تھے۔ رحمت عالم صلی اللہ علیہ وسلم نے اس فقیر وحقیر کو اپنے سینہ مبارک کے ساتھ لگایا۔ اسی طرح حضرت ابوبکر صدیق نے بھی معانقہ کیا۔ پھر رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اس آیت سے متعلق مجھے سمجھا نے لگے اور ساتھ ساتھ فرمایا کہ تم پریشان کیوں ہوتے ہو؟ اتنی آسان بات ہے اور تم حد سے زیادہ پریشان ہو گئے۔ رسو ل اللہ صلی اللہ علیہ وسلم مجھے سمجھا رہے تھے اور تسلی دے رہے تھے جبکہ حضر ت ابوبکر صدیق مسکرا رہے تھے۔ انہوں نے بھی کہا کہ آسان بات تھی، تمہاری پریشانی کی وجہ سے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم یہاں تشریف لائے۔ میں یہ سوچ ہی رہا تھا کہ رحمت عالم صلی اللہ علیہ وسلم کو درس کے لیے اپنی نشست پر بٹھاؤں تو آپ نے فرمایا کہ اگر ترجمہ وتفسیر میں کوئی مشکل پیش آجائے تو پریشان نہ ہونا، بلکہ مولانا سرفرازخان صفدر سے پوچھ لینا، وہ پیچیدگی حل کر دیں گے۔ یہ کہہ کر رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم وضوبنا نے کے لیے تشریف لے گئے۔ حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ بھی ان کے ساتھ تھے اور میں بھی ان کی معیت میں وضو کرنے کے لیے وضو خانہ کی طرف چل پڑا۔

(یہ یادر ہے کہ قاری صاحب کہتے ہیں کہ اس وقت ان کے ذہن میں دور دور تک حضرت مولانا سرفراز خان صفدر ؒ کا خیال نہیں تھا۔ زندگی میں صرف ایک مرتبہ ۱۹۸۷ء میں انھیں مولانا کی زیارت ہوئی تھی۔ وہ یوں کہ دورہ حدیث کے بعد وہ سال کی جماعت کے ساتھ گئے ہوئے تھے اور رائے ونڈ میں عربوں کی جماعت کے ساتھ ان کی تشکیل ہوئی تھی۔ اس سفر میں تین دن انھوں نے حضرت کی مسجد میں گزارے۔ حضرت کا صبح کا درس سنا، زیارت کا شرف حاصل ہوا، خیریت دریافت کی اور حضرت نے دعاؤں سے نوازا۔ زندگی میں یہ ان کی پہلی ملاقات تھی۔) 

میرا دل چاہ رہا تھا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے بہت سے سوالات پوچھوں اور مسائل دریافت کروں۔ میں وضو بنا کر جونہی درس گاہ کی طرف آیا تو کیا دیکھتاہوں کہ حضرت مولانا محمد سرفراز خان صفدرؒ میری جگہ پر بیٹھ کر انہی آیات کا درس دے رہے ہیں۔ میں نے مولانا صفدر کو دیکھتے ہی پہچان لیا کہ یہ تو وہی شیخ صفدر ہیں جن کو میں نے ۱۷سال قبل گکھڑ کی مسجد میں دیکھا تھا اور ملاقات کا شرف حاصل کیا تھا۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ابھی وضو بناکر واپس نہیں آئے تھے۔ میں حضرت شیخؒ کے قریب ہو کر بیٹھ گیا تو حضرت نے مجھے سمجھاتے ہوئے فرمایا کہ تم پریشان ہوگئے تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم تشریف لائے۔ آئندہ ایسی فکر میں مبتلا نہ ہونا۔ دیکھومیں تمہیں ان آیات میں ربط سمجھا تا ہوں۔ فرمایا کہ طہارت دوقسم کی ہے۔ ایک طہارت باطنی اور دوسرے طہارت ظاہری۔ آیت نمبر ۵ میں طہارت باطنی کا بیان تھا اور آیت نمبر ۶ میں طہارت ظاہری کا ذکر ہے۔ پھرمجھ سے فرمایا کہ اب بتاؤ، میں نے کیاکہا؟ میں نے ان کے بتائے ہوئے الفاظ کو دہرایا تو پھرمجھے مزید سمجھایا۔ اس کے بعد ہم دونوں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف جانے لگے جہاں آ پ وضو بنا رہے تھے۔ ابھی راستے ہی میں تھے کہ میر ی بچی نے مجھے جگا دیا۔ 

جب میں اٹھا تو ایک طرف خوشی ومسرت کی انتہا نہ تھی، اور دوسری طرف خفا بھی تھا کہ اگر بچی مجھے نہ جگاتی تو میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اور حضرت ابوبکرصدیقؓ کی مزید ملاقا ت وزیارت کا شر ف حاصل کرتا اور حضرت شیخ صفدرؒ کی رفاقت میں کچھ مزید استفادہ کرتا۔ انھی خیالات میں تھا کہ تھوڑی دیر کے بعد دوبارہ آنکھ لگ گئی۔ اب خواب میں دیکھتا ہوں کہ میں انہی آیات کادرس دے رہا ہوں اور خواب کی حالت میں اپنا خواب بیان کرتے ہوئے یہ پورا واقعہ درس میں موجود لوگوں کوسنار ہا ہوں۔ میں نے کہا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اور حضرت ابوبکرصدیقؓ یہاں تشریف لائے تھے اور انہوں نے مجھے فرمایا کہ اگر ترجمہ وتفسیر میں کوئی مشکل پیش آئے تو مولانا سرفراز صفدرؒ سے دریافت کر لینا۔ یہاں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ مولانا سرفراز صفدرؒ بھی تشریف لائے تھے اور انہوں نے ان آیات کے باہمی ربط سے متعلق یہ فرمایا ہے۔ 

خواب سے بیداری کے بعد نیند تو چلی گئی اور اب آنکھوں میں نیند کے بجائے خوشی اور مسرت کے آنسو رواں تھے۔ مچھلی جس طرح بغیر پانی کے تڑپتی ہے، میرا حال بھی وہی تھا کہ اب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اور حضرت ابوبکر صدیقؓ سے زندگی میں دوبارہ ملاقات کیونکر ہوگی۔ یہ خیال بھی آیا کہ شیخ صفدرؒ سے، جن کو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم بھی پسند کرتے ہیں اور جو آپ کی علمی وراثت کے صحیح جانشین اور امین ہیں، ان سے ملاقات کیسے کی جائے، کیونکہ اگر ان کی طرف نکلتا ہوں تو سال کی جماعت کے ساتھ جانے سے رہ جاؤں گا جس کا مجھے د وتین دنوں میں انتظام کرنا ہے۔ اسی دوران ذہن میں یہ بات آئی کہ قصہ خوانی جاکر حضرت شیخؒ کی تفسیر کہیں سے تلاش کرتا ہوں تاکہ اس تفسیر میں ربط دیکھوں جو آپ نے خواب میں سمجھایا ہے۔ قصہ خوانی میں تلاش بسیار کے باوجود آپ کی تفسیر تو نہیں ملی، البتہ سورۃ مائدہ کا درس کیسٹ میں دستیاب ہو گیا۔ میں نے وہ لے لیا۔ پھر ٹیپ ریکارڈر کی ضرورت تھی، وہ بھی خرید کرگھر آیا اور ان دونوں آیات کاربط سنا۔ ہو بہو وہی تفسیر تھی جو آپ ؒ نے خواب میں مجھے سمجھائی تھی۔ 

مشاہدات و تاثرات

جولائی تا ستمبر ۲۰۰۹ء

جلد ۲۰ ۔ شمارہ ۷ تا ۱۰

گر قبول افتد زہے عز و شرف
محمد عمار خان ناصر

ہم نے تمام عمر گزاری ہے اس طرح (۱)
مولانا محمد سرفراز خان صفدرؒ

ہم نے تمام عمر گزاری ہے اس طرح (۲)
مولانا محمد سرفراز خان صفدرؒ

حضرت شیخ الحدیثؒ کے اساتذہ کا اجمالی تعارف
مولانا محمد یوسف

امام اہل سنتؒ کے چند اساتذہ کا تذکرہ
مولانا قاضی نثار احمد

گکھڑ میں امام اہل سنت کے معمولات و مصروفیات
قاری حماد الزہراوی

امام اہل سنت رحمۃ اللہ علیہ کا تدریسی ذوق اور خدمات
مولانا عبد القدوس خان قارن

امام اہل سنت رحمہ اللہ کی قرآنی خدمات اور تفسیری ذوق
مولانا محمد یوسف

امام اہل سنت رحمہ اللہ کی تصانیف: ایک اجمالی تعارف
مولانا عبد الحق خان بشیر

امام اہل سنتؒ کی تصانیف اکابر علما کی نظر میں
حافظ عبد الرشید

حضرت شیخ الحدیث رحمہ اللہ اور دفاعِ حدیث
پروفیسر ڈاکٹر محمد اکرم ورک

منکرینِ حدیث کے شبہات کے جواب میں مولانا صفدر رحمہ اللہ کا اسلوبِ استدلال
ڈاکٹر محمد عبد اللہ صالح

’’مقام ابی حنیفہ‘‘ ۔ ایک علمی و تاریخی دستاویز
ڈاکٹر انوار احمد اعجاز

’’عیسائیت کا پس منظر‘‘ ۔ ایک مطالعہ
ڈاکٹر خواجہ حامد بن جمیل

حضرت شیخ الحدیث رحمہ اللہ کی تصانیف میں تصوف و سلوک کے بعض مباحث
حافظ محمد سلیمان

سنت اور بدعت ’’راہ سنت‘‘ کی روشنی میں
پروفیسر عبد الواحد سجاد

مولانا محمد سرفراز خان صفدر رحمہ اللہ کا انداز تحقیق
ڈاکٹر محفوظ احمد

مولانا محمد سرفراز خان صفدر کا اسلوب تحریر
نوید الحسن

امام اہل سنت رحمہ اللہ کا شعری ذوق
مولانا مومن خان عثمانی

حضرت والد محترمؒ سے وابستہ چند یادیں
مولانا ابوعمار زاہد الراشدی

شمع روشن بجھ گئی بزم سخن ماتم میں ہے
قاضی محمد رویس خان ایوبی

والد محترم کے ساتھ ایک ماہ جیل میں
مولانا عبد الحق خان بشیر

پیکر علم و تقویٰ
مولانا شیخ رشید الحق خان عابد

دو مثالی بھائی
مولانا حاجی محمد فیاض خان سواتی

حضرت والد محترمؒ کے آخری ایام
مولانا عزیز الرحمٰن خان شاہد

میرے بابا جان
ام عمران شہید

ذَہَبَ الَّذِیْنَ یُعَاشُ فِیْ اَکْنَافِہِمْ
اہلیہ قاری خبیب

اب جن کے دیکھنے کو اکھیاں ترستیاں ہیں
ام عمار راشدی

ابا جیؒ اور صوفی صاحبؒ ۔ شخصیت اور فکر و مزاج کے چند نمایاں نقوش
محمد عمار خان ناصر

قبولیت کا مقام
مولانا محمد عرباض خان سواتی

جامع الصفات شخصیت
مولانا قاری محمد ابوبکر صدیق

ایک استاد کے دو شاگرد
حافظ ممتاز الحسن خدامی

داداجان رحمہ اللہ ۔ چند یادیں، چند باتیں
حافظ سرفراز حسن خان حمزہ

کچھ یادیں، کچھ باتیں
حافظ محمد علم الدین خان ابوہریرہ

اٹھا سائبان شفقت
حافظ شمس الدین خان طلحہ

ملنے کے نہیں نایاب ہیں ہم
ام عفان خان

نانا جان علیہ الرحمہ کی چند یادیں
ام ریان ظہیر

میرے دادا جی رحمۃ اللہ علیہ
ام حذیفہ خان سواتی

میرے شفیق نانا جان
ام عدی خان سواتی

وہ سب ہیں چل بسے جنہیں عادت تھی مسکرانے کی
بنت قاری خبیب احمد عمر

بھولے گا نہیں ہم کو کبھی ان کا بچھڑنا
بنت حافظ محمد شفیق (۱)

دل سے نزدیک آنکھوں سے اوجھل
اخت داؤد نوید

مرنے والے مرتے ہیں لیکن فنا ہوتے نہیں
بنت حافظ محمد شفیق (۲)

شیخ الکل حضرت مولانا سرفراز صاحب صفدرؒ
مولانا مفتی محمد تقی عثمانی

نہ حسنش غایتے دارد نہ سعدی را سخن پایاں
مولانا مفتی محمد عیسی گورمانی

امام اہل سنت کی رحلت
مولانا محمد عیسٰی منصوری

امام اہلِ سنتؒ کے غیر معمولی اوصاف و کمالات
مولانا سعید احمد جلالپوری

حضرت مولانا محمد سرفراز خاں صفدرؒ کا سانحۂ ارتحال
مولانا مفتی محمد زاہد

علم و عمل کے سرفراز
مولانا سید عطاء المہیمن بخاری

اک شمع رہ گئی تھی سو وہ بھی خموش ہے
مولانا محمد جمال فیض آبادی

چند منتشر یادیں
مولانا محمد اسلم شیخوپوری

اک چراغ اور بجھا اور بڑھی تاریکی
پروفیسر غلام رسول عدیم

چند یادگار ملاقاتیں
پروفیسر ڈاکٹر علی اصغر چشتی

امام اہل سنتؒ: چند یادیں، چند تأثرات
حافظ نثار احمد الحسینی

ایک عہد ساز شخصیت
پروفیسر ڈاکٹر حافظ محمود اختر

پروانے جل رہے ہیں اور شمع بجھ گئی ہے
مولانا ظفر احمد قاسم

وما کان قیس ہلکہ ہلک واحد
حضرت مولانا عبد القیوم حقانی

ہم یتیم ہوگئے ہیں
مولانا محمد احمد لدھیانوی

میرے مہربان مولانا سرفراز خان صفدرؒ
ڈاکٹر حافظ محمد شریف

مثالی انسان
مولانا ملک عبد الواحد

وہ جسے دیکھ کر خدا یاد آئے
مولانا داؤد احمد میواتی

دو مثالی بھائی
مولانا گلزار احمد آزاد

امام اہل سنت رحمۃ اللہ علیہ چند یادیں
مولانا محمد نواز بلوچ

میرے مشفق اور مہربان مرشد
حاجی لقمان اللہ میر

مت سہل ہمیں جانو
ڈاکٹر فضل الرحمٰن

حضرت مولانا سرفراز صفدرؒ اور مفتی محمد جمیل خان شہیدؒ
مفتی خالد محمود

شیخ کاملؒ
مولانا محمد ایوب صفدر

اولئک آبائی فجئنی بمثلھم
مولانا عبد القیوم طاہر

چند یادیں اور تاثرات
مولانا مشتاق احمد

باتیں ان کی یاد رہیں گی
صوفی محمد عالم

یادوں کے گہرے نقوش
مولانا شمس الحق مشتاق

علمائے حق کے ترجمان
مولانا سید کفایت بخاری

دینی تعلق کی ابتدا تو ہے مگر انتہا نہیں
قاری محمد اظہر عثمان

امام اہل سنت مولانا سرفراز خان صفدر
مولانا الطاف الرحمٰن

امام اہل سنتؒ اور ان کا پیغام
حافظ محمد عامر جاوید

ایک شخص جو لاکھوں کو یتیم کر گیا
مولانا عبد اللطیف قاسم چلاسی

تفسیر میں امام اہل سنتؒ کی بصیرت : ایک دلچسپ خواب
ڈاکٹر محمد حبیب اللہ قاضی

امام اہل سنتؒ ۔ چند ملاقاتیں
حافظ تنویر احمد شریفی

مجھے بھی فخر ہے شاگردئ داغِؔ سخن داں کا
ادارہ

سماحۃ الشیخ سرفراز خان صفدر علیہ الرّحمۃ ۔ حیاتہ و جہودہ الدینیۃ العلمیّۃ
ڈاکٹر عبد الماجد ندیم

امام اہل السنۃ المحدث الکبیر ۔ محمد سرفراز خان صفدر رحمہ اللہ
ڈاکٹر عبد الرزاق اسکندر

العلامۃ المحدث الفقیہ الشیخ محمد سرفراز خان صفدر رحمہ اللہ
ڈاکٹر محمد اکرم ندوی

محدث العصر، الداعیۃ الکبیر الشیخ محمد سرفراز صفدر رحمہ اللہ
مولانا طارق جمیل

امام اہل سنتؒ کے عقائد و نظریات ۔ تحقیق اور اصول تحقیق کے آئینہ میں
مولانا عبد الحق خان بشیر

حضرت شیخ الحدیث رحمہ اللہ کا منہج فکر اور اس سے وابستگی کے معیارات اور حدود
محمد عمار خان ناصر

درس تفسیر حضرت مولانا سرفراز خان صفدر ۔ سورۂ بنی اسرائیل (آیات ۱ تا ۲۲)
محمد عمار خان ناصر

حضرات شیخین کی چند مجالس کا تذکرہ
سید مشتاق علی شاہ

خطبہ جمعۃ المبارک حضرت مولانا سرفراز خان صفدرؒ
مولانا محمد سرفراز خان صفدرؒ

امام اہل سنت رحمہ اللہ کے دلچسپ واقعات
مولانا محمد فاروق جالندھری

حفظ قرآن اور دورۂ حدیث مکمل کرنے والے طلبہ سے امام اہل سنتؒ کا ایک ایمان افروز تربیتی خطاب
مولانا محمد سرفراز خان صفدرؒ

تعلیم سے متعلق ایک سوال نامہ کا جواب
مولانا محمد سرفراز خان صفدرؒ

امام اہل سنتؒ کی فارسی تحریر کا ایک نمونہ
مولانا محمد سرفراز خان صفدرؒ

امام اہل سنتؒ کے منتخب مکاتیب
مولانا محمد سرفراز خان صفدرؒ

ہمارے پیر و مرشد
محمد جمیل خان

امام اہل سنت کے چند واقعات
سید انصار اللہ شیرازی

تعزیتی پیغامات اور تاثرات ۔ بسلسلہ وفات حضرت مولانا سرفراز خان صفدرؒ
ادارہ

حضرت شیخ الحدیثؒ کی وفات پر اظہار تعزیت کرنے والے مذہبی و سیاسی راہ نماؤں کے اسمائے گرامی
ادارہ

مسئلہ حیات النبی صلی اللہ علیہ وسلم اور متوازن رویہ
مولانا ابوعمار زاہد الراشدی

امام اہل سنتؒ کے علمی مقام اور خدمات کے بارے میں حضرت مولانا محمد حسین نیلویؒ کی رائے گرامی
ادارہ

امام اہل سنت رحمہ اللہ کا دینی فکر ۔ چند منتخب افادات
مولانا محمد سرفراز خان صفدرؒ

حضرت مولانا سرفراز خان صفدرؒ ۔ شجرۂ نسب سلسلہ نقشبندیہ مجددیہ
ادارہ

سلسلہ نقشبندیہ میں حضرت شیخ الحدیثؒ کے خلفاء
ادارہ

آہ! اب رخصت ہوا وہ اہل سنت کا امام
محمد عمار خان ناصر

اے سرفراز صفدر!
مولوی اسامہ سرسری

ان کو ڈھونڈے گا اب تو کہاں راشدی
مولانا ابوعمار زاہد الراشدی

امام اہل سنت قدس سرہ
مولانا غلام مصطفٰی قاسمی

حضرت مولانا سرفراز خان صفدرؒ کی یاد میں
مولانا منظور احمد نعمانی

مضی البحران صوفی و صفدر
حافظ فضل الہادی

علم کی دنیا میں تو ہے سربلند و سرفراز
ادارہ

قصیدۃ الترحیب
ادارہ

خطیب حق بیان و راست بازے
محمد رمضان راتھر