تعارف و تبصرہ

ادارہ

مُعلّمِ عربی (حصہ اول و دوم)

مؤلف: مولانا سعید احمد عنایت اللہ

صفحات: حصہ اول (۱۸۰) حصہ دوم (۳۰۰)

کتابت و طباعت عمدہ

ناشر: قرطبہ ٹریڈرز، سیالکوٹ

عربی مسلمانوں کی دینی و علمی زبان ہونے کی وجہ سے ہر دور میں خصوصیت کی حامل رہی ہے اور دنیا بھر میں عربی کی تعلیم و ترویج کے لیے مسلم علماء اور ادارے کوشاں رہے ہیں۔ برصغیر پاک و ہند و بنگلہ دیش میں عربی کی تعلیم و تدریس کا سلسلہ اس خطہ میں مسلمانوں کی آمد کے ساتھ ہی شروع ہو گیا تھا اور ہر دور کے ضروریات اور تقاضوں کے متعلق اہلِ علم نے س مقصد کے لیے کتب و رسائل تحریر کیے ہیں جن کو جمع کیا جائے تو ایک اچھا خاصا ذخیرہ بن جاتا ہے۔

ہمارے ہاں دینی مدارس میں رائج ’’درسِ نظامی‘‘ کے نصاب میں عربی زبان کی مہارت سے طالب علم کو بہرہ ور کرنے کے لیے صرف و نحو، ادب اور معانی و بلاغت کی جو کتابیں ایک خاص ترتیب کے ساتھ شامل کی گئی ہیں، قرآن و حدیث اور دیگر اسلامی علوم کے ذخیرہ سے بھرپور استفادہ کے لیے ان کی افادیت و ضرورت آج بھی مسلّم ہے; تاہم دورِ حاضر میں تعلیم کے طریق کار اور اسلوب پر سامنے آنے والے نئے رجحانات ان کتابوں کے حوالہ سے نصابِ تعلیم میں تکرار و طوالت کے خدشہ سے دوچار ہیں اور ایسی کتابوں کی ضرورت پر مسلسل زور دیا جا رہا ہے جس میں اختصار اور آسانی کے ساتھ تمام متعلقہ مسائل طلبہ کے ذہن نشین کرانے کی صورت اختیار کی گئی ہو۔

اگرچہ دینی علوم میں مہارت تامہ حاصل کرنے والے طلبہ اور علماء کے لیے یہ صورت ہمارے نزدیک محلِ نظر ہے; تاہم جو طبقہ جدید تعلیم کے ساتھ ساتھ قرآن و حدیث سے براہِ راست استفادہ کی صلاحیت و استعداد فی الجملہ حاصل کرنے کا خواہش مند ہے اس کے لیے صرف و نحو کے نصاب میں اختصار و سہولت کی ضرورت و اہمیت سے انکار کی گنجائش نہیں ہے، اور اس مقصد کے لیے اردو میں لکھی جانے والی کتابوں میں مولانا سعید احمد عنایت اللہ کی یہ کتاب بلاشبہ ایک قابل قدر اضافہ ہے۔

مولانا سعید احمد عنایت اللہ ہمارے محترم دوست ہیں، سیالکوٹ کے رہنے والے ہیں، مدرسہ صولتیہ مکہ مکرمہ میں مدرس ہیں اور دینی خدمت کے جذبہ سے سرشار ہیں۔ انہوں نے صرف و نحو کے قواعد کو آسان زبان اور سہل انداز میں مناسب ترتیب کے ساتھ جمع کر کے مشق و تمرین کے ذریعے انہیں طلبہ کے ذہنوں میں اتارنے کی کامیاب کوشش کی ہے۔ اللہ پاک انہیں جزائے خیر سے نوازیں، آمین یا الٰہ العالمین۔

قیمت کتاب پر درج نہیں ہے، اسے قرطبہ ٹریڈرز سیالکوٹ نے شائع کیا ہے اور مکتبہ عزیزیہ اردو بازار لاہور سے بھی طلب کی جا سکتی ہے۔

سیرت مجمع کمالات

از پروفیسر محمد عبد الجبار شیخ

صفحات: ۳۸۰

کتابت و طباعت عمدہ

ناشر: ادارہ تعلیماتِ سیرت، علامہ اقبال کالونی، سیالکوٹ کینٹ

سیالکوٹ کے جناب پروفیسر محمد عبد الجبار شیخ کو اللہ رب العزت نے علمی و دینی ذوق کے ساتھ ساتھ جناب نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی سیرتِ طیبہ کے ساتھ خصوصی لگاؤ سے نوازا ہے۔ انہوں نے مختلف عالمی اور قومی سیرت کانفرنسوں میں سیرتِ طیبہ علی صاحبہا التحیۃ والسلام کے متعدد پہلوؤں پر مقالات کی صورت میں اپنے جذبات و احساسات کو خوبصورت انداز میں پیش کیا ہے اور زیرِ نظر کتاب ان کے اسی نوعیت کے گیارہ مقالات کا مجموعہ ہے۔جناب عبد الجبار شیخ نے روایتی انداز سے ہٹ کر اجتماعی زندگی میں پیش آمدہ مسائل پر سیرتِ طیبہ کی روشنی میں بحث کی ہے اور عام فہم انداز میں ان مسائل کے اسلامی حل سے آج کی انسانی اجتماعیت کو روشناس کرانے کی کوشش کی ہے۔

تعارف و تبصرہ

(دسمبر ۱۹۸۹ء)

دسمبر ۱۹۸۹ء

جلد ۱ ۔ شمارہ ۳

آہ! الشیخ عبد اللہ عزامؒ
مولانا ابوعمار زاہد الراشدی

حضرت مولانا عزیر گلؒ
مولانا ابوعمار زاہد الراشدی

پیرِ طریقت مولانا حافظ غلام حبیب نقشبندیؒ
مولانا ضیاء الرحمٰن فاروقی

اسلام کا فطری نظام
مولانا محمد سرفراز خان صفدرؒ

کیا افغان مجاہدین کی جنگ مسلمان اور مسلمان کی جنگ ہے؟
مولانا ابوعمار زاہد الراشدی

دینی تعلیم اور مدارس کی اہمیت
حضرت مولانا سید ابو الحسن علی ندوی

تلاوتِ قرآنِ مجید باعث خیر و برکت ہے
محمد اسلم رانا

کیا بائیبل میں تحریف پر قرآن کریم خاموش ہے؟
محمد عمار خان ناصر

علماء کا مقام اور ان کی ذمہ داری
قاضی محمد اسرائیل

کیا واقعی سندھ کو نبی اکرمؐ کی قدم بوسی کا شرف حاصل ہے؟
غازی عزیر

موت کا منظر
حکیم سید محمود علی فتحپوری

عورت کی حکمرانی کی شرعی حیثیت
مولانا مفتی حبیب الرحمٰن خیرآبادی

توہینِ صحابہؓ کے مرتکب کو تین سال قید با مشقت کی سزا
ادارہ

منقبتِ صحابہؓ
سرور میواتی

تعارف و تبصرہ
ادارہ

قرآنی نظام اپنے لیے ماحول خود بناتا ہے
شیخ الاسلام علامہ شبیر احمد عثمانی

Flag Counter