تعارف و تبصرہ

ادارہ

’’پرویز صاحب کا فہم قرآن‘‘

غلام احمد پرویز صاحب کے فہم دین اور ان کے پیش کردہ افکار پر علمی حلقوں کی جانب سے مختلف نوع کی تنقیدیں سامنے آ چکی ہیں۔ جناب جاوید احمد غامدی نے اپنے ایک خطاب میں مدرسہ فراہی کے مخصوص ذوق کے تناظر میں پرویز صاحب کے اس طریق تفسیر کی خامیاں واضح کی تھیں جس کے تحت وہ قرآنی الفاظ کا مدعا ومفہوم طے کرتے ہیں۔ غامدی صاحب کے تنقیدی زاویہ کو خورشید احمد ندیم صاحب نے اپنے ایک مضمون میں مزید مثالوں سے واضح کیا۔ یہ تنقید اہل علم میں دلچسپی سے پڑھی گئی اور پرویز صاحب کے فکر سے متاثر بعض حضرات کے لیے بھی، جن میں زیر نظر کتابچہ کے مرتب جناب شکیل عثمانی بھی شامل ہیں، تنبہ کا باعث بنی۔ 

دار التذکیر، اردو بازار، لاہور نے غامدی صاحب کے مذکورہ خطاب اور خورشید ندیم صاحب کے مضمون کو ایک کتابچہ کی صورت میں شائع کیا ہے جس میں فکر پرویز کے حوالے سے شکیل عثمانی صاحب اور احسن تہامی صاحب کی تاثراتی تحریریں بھی شامل ہیں۔ خورشید احمد ندیم صاحب کے مضمون میں درج بعض مثالوں کے حوالے سے طلوع اسلام اور اشراق میں مزید بحثیں بھی شائع ہوئی تھیں۔ اگر ان سب تحریروں کو یکجا کر کے ایک مجموعے کی شکل دی جائے تو قارئین کے لیے طرفین کے موقف اور استدلال کو سمجھنے میں زیادہ مدد مل سکتی ہے۔

صفحات: ۴۸۔ قیمت: ۲۴ روپے۔

(عمار ناصر)

’’قیادت اورہلاکت اقوام ‘‘ / ’’توحید اورشرک‘‘

زیر نظر دونوں کتابیں الفوز اکیڈمی کی شائع کردہ ہیں۔ ’’قیادت اور ہلاکت اقوام‘‘ کے زیر عنوان خلیل الرحمن چشتی صاحب نے زلزلوں اوردیگر آفات سماوی سے قوموں کی ہلا کت کے متعلق الٰہی ضابطے قرآن مجید کی روشنی میں موثر اور عام فہم انداز میں پیش کیے ہیں۔ قوموں کی ہلاکت میں فاسق وفاجر قیادتوں کا کتنا عمل دخل ہوتاہے، یہ نکتہ بھی واضح اورمدلل انداز میں لکھاگیاہے۔ 

’’توحید اور شرک‘‘ کے زیر عنوان کتاب میں محمد خان منہاس اور خلیل الرحمن چشتی نے توحیداورشرک کی مختلف اقسام کو واضح، عام فہم اورمدلل انداز میں تحریرکیاہے۔ یہ کتاب کسی خاص فرقہ کے خلاف نہیں بلکہ عام فہم علمی انداز میں اپنا سوز دروں دوسروں تک عام کرنے کی عمدہ کوشش ہے۔ دونوں کتابیں اس قابل ہیں کہ درس قرآن کے حلقوں میں اور عوامی سطح پر انھیں عام کیا جائے۔ 

ناشر:الفوز اکیڈمی گلی نمبر ۱۵ ،پولیس فاونڈیشن ۴؍۱۱ Eگولڑہ ،اسلام آباد 

(مولانا مشتاق احمد)

’’تحقیق مسئلہ ایصال ثواب‘‘

’’ایصال ثواب‘‘ کے مسئلے میں ایک گروہ نے اگر افراط کا شکا ر ہوکر دین میں بدعات کو داخل کر دیا ہے تو دوسرے گروہ نے تفریط کا شکار ہو کر اس کا سرے سے انکار ہی کردیا ہے ۔ زیر نظر مجموعہ میں قاری جمیل الرحمن اختر صاحب نے مسئلہ ایصال ثواب کے متعلق شیخ الحدیث مولانامحمد سرفراز خان صفدر صاحب ،حضرت مولانا منظور احمد نعمانی ؒ اور مولانا امین صفدر اوکاڑوی کے علمی مقالات کو جمع کیا ہے جس سے موضوع سے دلچسپی رکھنے والے حضرات کے لیے یہ ایک مفید مجموعہ بن گیا ہے۔

۱۲۸ صفحات پر مشتمل یہ کتاب انجمن خدام الاسلام رجسڑڈ حنفیہ قادریہ باغبانپورہ لاہور نے شائع کی ہے ۔ 

(محمد یاسر الدین)

’’دلائل وجود باری تعالیٰ ملاصدرا کی نظر میں‘‘

فلسفہ میں الٰہیات ایک مستقل موضوع ہے۔ برصغیر کے مدارس میں جن فلاسفہ کی کتب شامل نصاب رہی ہیں، ان میں ایک ملاصدرا بھی ہیں جو ایران کے رہنے والے تھے۔ ڈاکٹر ناصر زیدی صاحب فلسفہ میں تخصص رکھتے ہیں اور اس موضوع پر ان کے متعدد مقالہ جات شائع ہوچکے ہیں۔ زیر نظر مقالہ میں انہوں نے برہان حرکت، برہان حدوث، برہان امکان اوربرہان صدیقین کے عنوانات قائم کرکے الٰہیات کے متعلق ملاصدرا کے نظریات تحریر کیے ہیں۔ یہ کتاب فلسفہ کے طلبا کے لیے مفید کتاب ہوسکتی ہے، تاہم اس پر ناقدانہ رائے فلسفہ کا کوئی استاذ ہی دے سکتا ہے۔ 

ناشر: البصیرہ اسلام آباد 

(مولانا مشتاق احمد)

’’خطبات درخواستی ‘‘ /’’فیوضات درخواستی مع مجربات درخواستی ‘‘

زیر تبصرہ کتب مولانا شفیق الرحمن درخواستی کے علمی،تحقیقی اور اصلاحی افادات پر مشتمل ہیں جنھیں مولانا حماد اللہ درخواستی نے مرتب کیا ہے۔ ’’خطبات درخواستی‘‘ کے نام سے پہلے مجموعے میں ہر خطبہ آیات قرآنی واحادیث نبوی سے مزین ہے۔ علمی انداز کے ساتھ ساتھ عوامی انداز کی بھر پور جھلک بھی خطبات میں نمایاں ہے۔ اس کے صفحات ۴۵۰ اور قیمت ۲۸۰ روپے ہے۔ دوسرا مجموعہ ’’فیوضات درخواستی‘‘ کے نام سے مسائل تصوف وسلوک اور عملیات وتعویذات پر مبنی افادات پر مشتمل ہے۔ اس کے صفحات ۲۷۳ ہیں۔ 

ان مجموعوں کو مکتبہ درخواستی، جامعہ عبداللہ بن مسعودؓ خانپور ،رحیم یار خان نے شائع کیاہے ۔ 

(ادارہ)

’’مرزا غلام احمد قادیانی کا فقہی مذہب ،حنفیت یا غیر مقلدیت ‘‘

زیر نظر کتاب میں مولانا عبد الحق خان بشیر نے جامع اور مدلل انداز میں ترک تقلید کو گمراہی ثابت کرنے کے ساتھ ساتھ مرزا صاحب کے گمراہ کن افکار واعمال کو بھی ترک تقلید کا نتیجہ ثابت کیاہے اور ان کی اپنی تحریروں سے ان کے ترک تقلید کے مسلک کو ثابت کیاہے ۔

صفحات :۲۰۸، قیمت ۸۰روپے۔ ناشر: حق چار یار اکیڈمی مدرسہ حیات النبی، گجرات ۔ 

(عبد العزیز)

’’تذکرۃ المفسرین ‘‘ 

زیر نظر کتاب مولانا قاضی زاہد الحسینی ؒ کی مرتب کردہ ہے جس میں پہلی صدی ہجری سے موجودہ دور تک عرب وعجم میں پھیلے ہوئے چھ سو سے زائد مفسرین کے مختصر حالات جمع کیے گئے ہیں۔ علوم القرآن اور علم تفسیر سے اشتغال رکھنے والے علما اور طلبا کے لیے مفید ہے۔ 

ناشر: دارالارشاد اٹک شہر ۔قیمت ۲۲۰ روپے 

(عبد العزیز)

’’نماز تراویح اور مذاہب اہل حدیث‘‘

زیر نظر کتاب میں مولانا عبد الحق خان بشیر نے نے تراویح کی حیثیت اور تعداد رکعات کے بارے میں جمہور اہل سنت والجماعت کے موقف کو دلائل سے واضح کیاہے اور فقہ حنفی کی روشنی میں تراویح کے احکام ومسائل بیان کیے ہیں۔ کتاب اپنے موضوع کے اعتبارسے جامع ہے اور اہل علم حضرات کے لیے مفید ہے، تاہم مناظرانہ انداز سے احترازکیا جاتا تو بہتر تھا۔ 

(محمد یاسرالدین)

’’سوانح شیخ الاسلام مولانا سید حسین احمد مدنی ؒ‘‘

زیر تبصرہ کتاب میں مولانا عبد القیوم حقانی نے حضرت مولانا حسین احمد مدنی ؒ کی سوانح حیات کے ہر ہر پہلو کو مختلف ابواب اور عنوانات کے تحت نہایت دلچسپ انداز میں بیان کیاہے۔ کتاب کی نمایاں خصوصیت حضرت مولانا قاری محمد طیب قاسمی ؒ کا طویل مقدمہ ہے۔ موقع محل کی مناسبت سے عمدہ اشعار اورحوالہ جات بھی درج کیے گئے ہیں۔

القاسم اکیڈمی نوشہرہ کی شائع کردہ اس کتاب کی قیمت ۱۲۰ روپے ہے۔ 

(ادارہ)

’’اظہار الغرور فی کتاب آئینہ تسکین الصدور‘‘

شیخ الحدیث مولانا سرفراز خان صفدر مدظلہ نے مسئلہ حیات النبی پر ’تسکین الصدور‘کے نام سے مبسوط تصنیف لکھی جس پر اکابر علماے دیوبند کی تصدیقات موجود ہیں۔ اس کے جواب میں جمعیت اشاعۃ التوحید والسنۃ کے رہنما مولوی شیر محمد جھنگوی صاحب نے ’آئینہ تسکین الصدور‘ لکھ کر حضرت شیخ الحدیث کی مذکورہ تصنیف کو بے وقعت بنانا چاہا اوراس مہم کو کامیاب کرنے کے لیے بیسیوں مغالطے دیے۔ مولانا حافظ عبدالقدوس صاحب قارن نے ’اظہار الغرور‘ کے نام سے ان مغالطوں کاجواب دیاہے جو موضوع سے دلچسپی رکھنے والے قارئین کے لیے لائق مطالعہ ہے۔ 

ناشر: عمر اکادمی نزد گھنٹہ گھر گوجرانوالہ 

(مولانا مشتاق احمد)

’’اسلاف کاخوف خدا اور فکر آخرت ‘‘

زیرنظر کتاب میں ڈاکٹر منور حسین چیمہ نے خوف خدا اور فکر آخرت جیسی نہایت اہمیت کی حامل صفات کو اجاگر کرنے کی کوشش کی ہے۔ کتاب میں رسول کریم ﷺ ،صحابہ کرامؓ ،تابعین اور اولیا وصلحاے امت کے خوف خدا اور فکر آخرت پر مبنی سبق آموز واقعات درج کیے گئے ہیں۔ نامعلوم وجہ سے فہرست درج کرنے کی ضرورت محسوس نہیں کی گئی۔

ناشر: اسلامک اکیڈمی گکھڑ۔ ہدیہ: ۴۰ روپے۔ 

(ادارہ)

’’اسلامی آداب زندگی ‘‘

پیش نظر کتاب جناب محمد منصور الزمان صدیقی بانی وچیئرمین صدیقی ٹرسٹ کراچی کے تحریر فرمودہ ۵۵رسائل کا مجموعہ ہے جن میں انہوں نے حسن معاشرت، انابت الی اللہ، صراط مستقیم، کبائر سے اجتناب اور دیگر کئی موضوعات پر قرآنی آیات، احادیث نبویہ، سبق آموز واقعات، حکیمانہ اقوال اور فقہاے کرام کی آرا جمع کردی ہیں۔ کتاب کا اسلوب عام فہم اور سلیس ہے۔ زندگی کے ہر پہلو سے متعلق رہنمائی اور ہدایات سے معمور یہ کتاب تقریباً ایک ہزار صفحات پر مشتمل ہے۔

ناشر: القاسم اکیڈمی جامعہ ابو ھریرہؓ خالق آباد نوشہر ہ 

(حافظ مطیع اللہ عثمانی )

’’کشکول معرفت‘‘

پیش نظر کتاب مولانا قاضی محمد زاہد الحسینی کے ان علمی ودینی مکاتیب کا مجموعہ ہے جو انہوں نے مولانا عبد القیوم حقانی کے نام لکھے۔ مکتوبات کا مرکزی مضمون تزکیہ وتصوف اور احسان ہے ۔خطوط کی ہر ہر سطر سے دل سوزی ٹپکتی ہے۔ 

صفحات: ۴۵۰۔ قیمت: ۱۸۰ روپے۔ ناشر: القاسم اکیڈمی نوشہرہ ۔ 

(ادارہ)

’’ رہنمائے خوشخطی‘‘

زیر نظر کتاب خوشخطی سیکھنے کے خواہشمند طلباء وطالبات کے لیے بطور خاص تیار کی گئی ہے۔ خطاط مولانا محمد اسلم زاہد سید الخطاطین حضرت سید نفیس الحسینی مدظلہ العالی کے شاگر دخاص ہیں اور کتاب حضرت شاہ صاحب کی تقریظ سے مزین ہے۔ 

ناشر:مکہ کتاب گھر الکریم مارکیٹ حق سٹریٹ اردو بازار لاہور 

(مولانا مشتاق احمد)

’’انصاف فی حدود الاختلاف‘‘

مولانا سید خلیل حسین میاں صاحب نے ا س کتاب میں ان اسباب کی نشاندہی کی ہے جو کہ افتراق وانتشار کاباعث بنتے ہیں مثلاً عدم تحمل، دوسروں کی تحقیر وتذلیل، دوسروں کی پردہ دری، غیبت، الزام تراشی، خود پسندی، اور تکبروغیرہ۔ مصنف نے ان میں سے ہر ایک کی مذمت کے متعلق نصوص شرعیہ کو جمع کیا گیاہے۔ یہ کتاب خاص طورپر علما ے کرام کے لیے لکھی گئی ہے اوراس میں شیخ الحدیث حضرت مولانا محمد زکریاؒ کے افادات جابجا درج کیے گئے ہیں۔ کتاب اردو میں ہے جبکہ نام عربی میں اور وہ بھی نادرست۔ انصاف کی جگہ الانصاف لکھنا چاہیے تھا تاکہ نام عربی قواعد کے مطابق ہوتا۔ 

ناشر: القاسم اکیڈمی خالق آباد نوشہرہ 

(مولانا مشتاق احمد)

تعارف و تبصرہ

(مئی ۲۰۰۷ء)

مئی ۲۰۰۷ء

جلد ۱۸ ۔ شمارہ ۵

امت مسلمہ اور مغرب کے علوم و افکار
مولانا ابوعمار زاہد الراشدی

اسلام کی آفاقیت اور عالمگیریت
مفتی ابو احمد عبد اللہ لدھیانوی

قائد اعظم اور فوج کا سیاسی کردار
پروفیسر شیخ عبد الرشید

سنت کی دستوری اور آئینی حیثیت
ڈاکٹر محمد سعد صدیقی

غیر مسلم جج کی بحث اور مسلمان ججوں کا کردار
چوہدری محمد یوسف ایڈووکیٹ

مکاتیب
ادارہ

’دشتِ وصال‘ پر ایک نظر
پروفیسر میاں انعام الرحمن

تعارف و تبصرہ
ادارہ

الشریعہ اکادمی کی مطبوعات کی تقریب رونمائی
ادارہ

Flag Counter