مکاتیب

ادارہ

(۱)

۰۴/۱۲/۲۳

مکرمی!

السلام علیکم

ماہنامہ الشریعہ کا ماہ دسمبر ۲۰۰۴ کا شمارہ نظر سے گزرا۔ اس میں چھپنے والے مضامین دل کو اچھے لگے۔ ہر مضمون عمدہ اور معیاری تحقیق کا حامل ہے۔ دعا ہے کہ یہ سلسلہ جاری وساری رہے۔

امید ہے مزاج بخیر ہوں گے۔

والسلام

(ڈاکٹر) محمد سہیل عمر

ناظم

اقبال اکادمی پاکستان


(۲)

۵ جنوری ۲۰۰۵

محترم ومکرم ابو عمار زاہد الراشدی صاحب

سلام مسنون

الشریعہ کا جنوری ۲۰۰۵ کا شمارہ نظر نواز ہوا۔ میں جب ’’نوائے وقت‘‘ کے ادارہ میں تھا تو برادرم ارشاد احمد عارف کے پرچے سے استفادہ کرتا تھا، لیکن یہ سلسلہ کچھ بے ترتیب سا تھا۔ ضعیفی کے آزار کے باعث میں نے دفتر کی حاضری سے ریٹائرمنٹ لی تو الشریعہ کے مطالعے کا یہ بے ترتیب سلسلہ بھی ٹوٹ گیا۔ آج یہ پرچہ گھر کے پتے پر ملا تو بے پایاں خوشی ہوئی۔ میں اس غائبانہ کرم پر آپ کا بے حد شکر گزار ہوں۔ خوشی کی بات یہ ہے کہ تشدد پسندی کے رجحان کے خلاف آپ نے تحمل اور برداشت کے مثبت عمل کی تلقین کا سلسلہ عالیہ جاری کر رکھا ہے۔ اس پرچے میں شیعہ مجتہد اور دانش ور علامہ سید فخر الحسن کراروی کا مضمون اس جہت میں قابل عمل پیغام کی حیثیت رکھتا ہے۔ پروفیسر میاں انعام الرحمن نے نائن الیون کمیشن رپورٹ اور اے ایم ٹی ایف کا جائزہ معنویت سے پیش کیا ہے۔ ایک سرسری نظر ڈالنے کے بعد میں یہ شمارہ اب آہستہ آہستہ دل میں اتارنے کے لیے پڑھ رہا ہوں۔ مجھے خوشی ہوئی کہ میرے ایک محترم دوست شبیر احمد خان میواتی آپ کے معاونین میں شامل ہیں۔ ان جیسا ’’کتاب دوست‘‘ اس زمانے میں نظر نہیں آتا یا کم ملتا ہے۔

والسلام

مخلص

(ڈاکٹر) انور سدید

۱۷۲ ۔ ستلج بلاک، اقبال ٹاؤن، لاہور


(۳)

۱۰ جنوری ۲۰۰۵

جناب ابو عمار زاہد الراشدی صاحب

السلام علیکم ورحمۃ اللہ

اپنے ایک دوست جناب اسلم خان، مشعل سکول، سرائے نورنگ کے ہاں میں ماہنامہ الشریعہ دیکھا کرتا تھا۔ پڑھ کر جی خوش ہوا کہ ابھی یورپ کی طرح چرچ اور سٹیٹ کے علیحدہ ہونے کا عمل پاکستان میں نہیں دہرایا جائے گا۔ آپ کی روشن خیالی اور برداشت (tolerance) پر اپنے آپ کو مبارک باد دیں۔ عمار ناصر کے مضامین اگرچہ تلخ ہیں، تاہم مبنی بر زمینی حقائق ہیں۔ جو کچھ وہ لکھ رہے ہیں، میں اسے اپنے ضمیر کی آواز کہتا ہوں۔ پروفیسر انعام الرحمن صاحب اور اکرم ورک صاحب کے مضامین بھی آنکھیں کھولنے پر مجبور کر رہے ہیں۔ تاہم بعض رجعت پسند عناصر کے خطوط دیکھ کر دل کو رنج ہوتا ہے۔

یوسف خان جذاب

نار شکر اللہ، سرائے نورنگ، تحصیل وضلع بنوں


مکاتیب